Sunday, May 9, 2010

آسٹریلیا میں خیمہ زنی - ٹھریڈبو اور قدیم غار-7


اگر ایک مستاوی ضلا ع مثلث بنایاجاے، جس کا ہر ضلع 60کلو مٹر کا ہو اس طرح کہ اس کے ایک کونے پر کوما دوسرے پر جھیل جنڈا بائین ہو تو تیسرے پر جھیل اڈا منبی ہو گی. اول الذکر کوما کےشمال مغرب میں موخر الذکرجنوب مغرب میں واقع ہے. کیونکہ ہم اپنا سامان باندھ چکے تھے اور یہ طے تھا کہ رات تک سڈنی پہنچ جانا ہے تو سب بے فکر تھے کہ آرام سے قرب و جوار کے دیگر مقامات دیکھ لیے جائیں. جھیل اڈا منابی میں لوگ کشتی رانی کرتے دکھائی دیے. اس کے اطراف میں پہاڑ تھے تو ہمیں اترائی میں جانا پڑا، یہاں ہم چند لمحے رکے کیونکہ ہمارے ذہنوں میں یارنگو بلی کے غاروں کی سیر تھی جو کہ ایک منفرد تجربہ ہونے والی تھی، اس وقت تک ہم نے غاروں کی جانب سفر کا قصد نہیں کیا تھا مگر غور و خوص کے بعد فوری طور یہ فیصلہ کیا گیا کہ یہاں آکر غار نہ دیکھنا بیوقوفی ہوگی. لہٰذا 70کلو میٹر مسافت کی غرض سے دوبارہ گاڑیوں میں آن بیٹھے. یہ غار کوزیسکو نیشنل پارک میں واقع ہے. یہ پارک 690,000 ہیکٹر پر پھیلا ہوا ہے اور تھریڈبو بھی اسی میں شامل ہے، یوں سمجھ لیں کہ ہم دو دن اسی پارک میں ہی گھومتے رہے. گزشتہ روز تھریڈبو میں داخلے کا جرمانہ 16ڈالر دے چکے تھے اور اب اس کو 24 گھنٹوں سے زیادہ ہونے کے کارن یہاں دوبارہ پارکنگ فیس بھرنا پڑی، غاروں کا راستہ شاہراہ سے 7 کلومیٹر کی اترائی میں ہے، یہاں پہنچے تو ظہر کی نماز کا وقت تھا، اذان دی گئی اور ہم سب خدا کے حضور سر بسجود ہوے، یہ جگہ ایک معلوماتی مرکز اور غاروں کی داخلی چوکی تھی. سڑک کی دوسری جانب ہوٹل تھا جہاں سیاح رہائش پزیر تھے، ہماری نماز کے دوران چند سیاح ہمیں مسلسل تکتے رہے، بلکہ ایک آدھ نے ہماری نماز کے دوران تصویر بھی کھینچ ڈالی. نماز کے بعد غار کی طرف گاڑی لے کر چلے اور وہاں پارکنگ میں گاڑیاں کھڑی کیں. یہ غار یہاں موجود چاروں میں سے ایک تھا جس کا ہم مشاہدہ کرنے جا رہے تھے. اس کی پیمائش 400 میٹر تھی اور یہ چونے کے پتھر کی غاریں تھیں. یہاں درج معلومات سے پتہ چلا کہ ان غاروں میں قدیمی آسٹریلیائی باشندےaboriginals رہا کرتے تھے. تاج برطانیہ کا دائرۂ کار یہاں تک آیا اور ان لوگوں کو ان کے اصل وطن میں ہی غلامانہ زندگی گزارنی پڑی. انگریز سرکار نے یہاں آباد کاری کی اور اس خطہ کو دنیا سے روشناس کرایا، تاریخ دانوں کے مطابق آسٹریلیا ہی کالا پانی تھا جہاں سیاسی اور جنگی قیدی بھیجے جاتے تھے. گویا اس وقت کا گوانتاناموبے.
جاری ہے

1 comment:

  1. namaz parhta dekh kar itni hairani kiun hui hogi un logon ko ? waise ye guantanamobay wali baat bhi dara dene wali hai ....anyways nice job sr (y)

    ReplyDelete